کرپس مشن ۔۔ آخری حصہ

کرپس مشن ۔۔ آخری حصہ

cripps-mission-fails-april-1941-everett
کرپس مشن کی ناکامی کے بعد ہندوستان میں آزادی کی یکے بعد دیگرے تحریکیں چلنے لگیں

تھیں۔ کانگریس نے 11 اپریل 1942ء کو اس مشن کو مسترد کر دیا تھا۔ اور 12 اپریل 1942ء

کوکرپس سٹیفورڈ اپنی ناکامی تسلیم کرتے ہوئے وآپس انگلینڈ کو لوٹ گئے۔ اس معاہدے کے

دوران کانگریس کی نمائندگی مہاتماگاندھی، ابوالاکللام آزاد، جواہر لال نہرو، راجا گوپال

وغییرہ نے کی۔ جبکہ آل انڈیا مسلم لیگ کی نمائندگی محمد علی جناح، سر سکندر حیات خان،

ناظم الدین اور سعداللہ کر رہے تھے۔ اس مشن کی ناکامی کی ایک وجہ یہ بھی تھی کہ اس

منصوبے میں جلد یا دیر سے ہندوستان کی آزادی کی بات نہیں کی گئی تھی۔ جو کہ اب عوام

اور سیاسی پارڑیز کا دیرینہ مطالبہ تھا۔ دوسری جانب برطانیہ اپنی طاقت کا توازن برقرار

رکھنے کے لیے دفاع اور گورنر جنرل کے شعبے اپنی ملکیت میں رکھنا چاھتا تھا جو کہ

جنگی ضرورت کو پورا کرنے کے لیے تھا۔

یہ مشن توناکام ہو گیا مگر ہندوستان کی لیڈر شپ کو اک نئی راہ دکھلا دی۔ اور وہی انہیں

آزادی تک لے آئی۔

Share this post

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *